سورہ ص ، سورہ الزمر کا آئینہ

بسم اللہ الرحمن الرحیم

سورہ ص38

جب حضورﷺ نے علانیہ تبلیغ شروع کر دی تهی اس وقت یہ سورت  نازل ہوئ. جس قرآن کو لوگ جهٹلا رہے تهے اسی کی قسم کهائ گئ ہے .اور  انکار کرنے والوں کو متنبہ کیا گیا ہے. حقیقت کو نرالی انہونی کہنے والوں کو پے درپے انبیاء کے حالات زندگی سے سبق سیکھنے کی تلقین کی گئی ہے. الله تعالى کو حق بات کہنےوالے. حق فیصلہ  کرنے والے پسند ہیں اور کسی پیغمبر سے بهی حق بات کے برملا اظہار میں کمی ہوتی ہے تو وہ عدل کر نے والی زات اس کا نوٹس لیتی ہےاور اصلاح کرتی  ہے. الله تعالی کو وہ لوگ پسند ہیں جو غلطی تسلیم کریں عزر گناہ پیش کرنے کی بجائے اصلاح کریں کیونکہ گناہ کا عزر بعض اوقات بدتر از گناہ ہو جاتا ہے.نصیحت کرنے والے سے عداوت کدورت رکهے والے  کبرو غرور کا شکار ہوتے ہیں.کفارکو قصہ آدم و ابلیس سے یہ  باور کرایا جا رہا ہے کہ اپنے میں سے ایک  بندے کی نصیحت قبول کرنے سے جو تکبر انکار   کروا رہا ہے  ایسا ہی گهمنڈ،  تکبر ،حسد ابلیس نے بهی  کیا تها .اور وہ لعنت کا مستحق ہوا. تمہارا  انجام بهی اس کے ساته ہی ہوگا.لوگوں کی عجیب فطرت ہے ہر زمانے میں کہ اپنوں میں سے کوئ انہیں حق بات کی نصیحت کرے( وہ نبی  ہو یا عام انسان )تو انا کا مسئلہ بنا لیتے ہیں. اپنوں میں سے کسی کو اللہ تعالیٰ  اعلیٰ مقام عطا فرمائے تو  حسد کرتے ہیں.ہر دور کے اچهے برے لوگوں کی زہنیت ایک جیسی  ہوتی ہے.

اللهم إنا نعوذبک من الشقاق والنفاق  و سوء الأخلاق.آمین *********************************

بسم اللہ الرحمن الرحیم

سورہ الزمر 39

یہ سورت ہجرت حبشہ سے پہلے نازل ہوئ. پوری سورت ایک خطبہ ہے جو مکہ کےظلم وتشدد کے ماحول میں دیا گیا. خالص الله کی بندگی کی تلقین ہےشرک کے برے نتائج سے آگاہ کیا گیا ہے. گناہ گار لوگوں کی معافی کا اعلان عام ہے کہ وہ پلٹ آئیں تو ان سے  گزشتہ  گناہوں کی باز پرس نہ کی جائے گی الله تعالى بہت غفور رحیم ہے.. داعی کو تلقین کی گئ ہے کہ حالات کچه بهی ہوں لوگ جو بهی رویہ رکهیں حق کی تلقین سے باز آجانا اس کا شیوہ نہیں ہے. اگر لوگ غلط راستے پہ جمے ہوئے ہیں تو صراط مستقیم اس کا زیادہ  مستحق ہے کہ اس پہ ثابت قدم رہا جائے. .جنت اور جہنم کی طرف جانے والے گروہوں کا نقشہ کهینچا گیا ہے.جہنمی لوگوں کو فرشتے ڈانٹ پهٹکار کرتے. مار پیٹ کرتے ذلت کے ساته گهسیٹتے جا رہے ہوں گے.بے شک متکبروں کا انجام ذلت، ٹهکانہ جہنم ہی ہے. .جنتی گروہ کے لئے  عزت و اکرام   مرحبا سلام و دعا مبارک باد کے ساته دروازے کهولے جائیں گے. دونوں گروہ وہاں پہنچ جائیں گے جہاں کے وہ حقدار ہوں گے. ہم ایمان کے ساته اپنا احتساب کریں اور تصور کی آنکھ سے  دیکهیں ہم کس گروہ میں کهڑے ہیں”    و قضی بینهم بالحق و قیل الحمدلله رب العلمین "(75 آیت )

اللهم إنا نسئلک الجنت الفردوس و نعوذ بک من النار آمین طالب دعا بشری تسنیم

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s